سالگرہ

سالگرہ

 

عابدہ رحمانی


آج ٹوبی کی پہلی سالگرہ ہے ، ٹوبی میرا پیارا سفید پوڈل، اسے میں جب گود میں لیتی ہوں تو ہم دونوں کو ایک دوسرے سے کتنا سکون ملتا ہے مین تمہیں سمجھا نہیں سکتی” زینی نے اپنے ٹیکسٹ کے ساتھ مجھے اسکی سالگرہ کی تصویر بھیجی -ٹیکنالوجی کا کمال کہ تصویر ایک سیکنڈ میں ادھر سے ادھر چلی جاتی ہے ٹوبی نے نیلی لمبی ٹوپی نیلی جیکٹ پہنی ہوئی ہیزینی اسکے لئے  آج  ہی ایک نیا دبیز نرم گرم بستر اور کھلونے بھی لے آئی تھی اسکے سامنے خوبصورت سجا ہوا کیک ہے جسکی آرائیش اسکے مزاج کے مطابق کی گئی ہے اسکے اوپر پنجے اور مصنوعی ہڈیا ں بنی ہوئی ہیں  پیٹ سٹور سیزینی اسکے لئے اسکی پسند کے کھانے جوپیزا کی شکل میں بنے ہوئے ہیںآرڈر کر آئی تھی
اور میں افریقہ کے اس بچے کی تصویر ٹوبی کی تصویر کے مقابلے میں رکھتی ہوں۔  ننگ دھڑنگ فاقہ زدہ بچہ اسکا سوکھا جسم پتلی ٹانگیں ،پتلے پتلے بازو، پھولا سا پیٹ اور نکلا ہوا سر ساتھ میں اسی حلئے میں اسکی ماں-  کل اسکی ماں نے نے مٹی کھودی اسے پانی ملاکر آٹے کی طرح گوندھا اسکے گول گول پیڑھے بنائے اور چھوٹی چھوٹی روٹیاں بنائیں پھر اسنے آگ جلائی انکو آگ میں سینکا  اور بچوں کی طرف ایسے بڑھایا جیسے واقعی وہ پکی ہوئی روٹیاں ہوں اور بچوں نے خوب کھایا اسے اس مٹی کو کھانے کیلئے اتنی محنت کی کیا ضرورت تھی غالبا وہ یہ تسکین کرنا چاہ رہی تھی کہ وہ بچوں کو پکا کر کھلا رہی تھی آج کوئی چوہا اور چھپکلی بھی نظر نہ آئی – بچوں نے اور اسنے خود مٹی کی روٹیاں کھائیں اور ساتھ والے جوہڑ کا پانی پیا – وہ زندہ ہیں چل پھر رہے ہیں باتیں کرتے ہیں اور ا اسی مٹی سے بنے ہوئے انسان بھی ہیں——–

عابد

 

اپنا تبصرہ بھیجیں