Warning: Undefined array key "geoplugin_countryName" in /customers/d/7/4/urdufalak.net/httpd.www/wp-content/plugins/stylo-core/stylo-core.php on line 96

کوئی اور تھا

 

کوئی اور تھا

تحریر ضمیر آفاقی
کوئی اور تھا
ہر روز ملے جس سے
اس کی منزل کوئی اور تھا
میں تو راہگزر تھا اسکی
اس کا راستہ کوئی اور تھا
جو میری زندگی کی تلاش تھا
اس کی زندگی کوئی اور تھا
میں جس سے دامن بچاتا رہا
میرے اپنے ہی دل کا روگ تھا
جیسے مر کر بھی نہ پاسکا
اسے مل گیا کوئی اور تھا
وہ میرا رفیق مرا ہمسفر
کبھی تھا تو کوئی اور تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں