دو تازہ شعر مہتاب قدر۔جدہ

دو تازہ شعر مہتاب قدر۔جدہ

بام و در اور پیڑ پودے  جھک چکے ہیں ، ہے کہ نیں !
عمر کے ساتھ اچھے اچھے جھک چکے ہیں ،ہے کہ نیں !
اسقدر  پستی میں کیسے آ گیا  ہوں  آج میں ؟
میرے آگے تو فرشتے جھک چکے ہیں ہے کہ نیں!
مہتاب قدر

اپنا تبصرہ بھیجیں