Warning: Undefined array key "geoplugin_countryName" in /customers/d/7/4/urdufalak.net/httpd.www/wp-content/plugins/stylo-core/stylo-core.php on line 96

بوجھ ہے دل پر انجانا سا جینے کا ارمان نہیں

بوجھ ہے دل پر انجانا سا جینے کا ارمان نہیں

اول اول سہل تھی گو اب راہِ طلب آسان نہیں

میں تو سدا ہی خوش رہتا تھا آگ لگے اس الفت کو
الفت میں کلفت ہی دیکھی چین ملا اک آن نہیں

وار نگاہِ ناز کا بھی کچھ کم تو نہیں تلواروں سے
کوئی بتا ایسی نظر کا ہوتا کیوں چالان نہیں

جرم پہ مائل کرتا ہو گا مان لیا او شیطانو
جبرا تو کرواتا لیکن کام کوئی شیطان نہیں

اسلامی ملکوں کی حالت دیکھ کے رونا آتا ہے
اے مالک دن پھیر دے انکے کیا اسکا امکان نہیں

وقتِ ضرورت غیروں کی امداد کے خواہاں رہتے ہیں
ہاتھ سدا پھیلاتے رہنا تو مسلم کی شان نہیں

واعظ وعظ میں کچھ کہتا ہے حجرے میں کچھ کرتا ہے
قول و فعل میں فرق ہے اسکے یہ اچھا انسان نہیں

جز اوروں کو بھڑکانے کے اور کرے گا کیا ملا
خود نکلے شمشیر بکف ایسا اسکا ایمان نہیں

ممکن ہے میری بخشش بھی ہو جائیگی محشر میں
تیری رحمت سے بڑھ کر تو میرے گنہ رحمن نہیں

حق گوئی و بیباکی کے کیا کہنے فاروق مگر
روز لڑوں ہر اک سے جا کر اتنی مجھ میں جان نہیں

 

اپنا تبصرہ بھیجیں