Breaking News
Home / ادب

ادب

مسافر خانوں‌کے لٹیرے

عابدہ ابھی فلائٹ میں کچھ وقت باقی تھا تو میں لاہور ائیرپورٹ کے اندر انتظار گاہ میں بیٹھ گئی جہاں باقی مسافر بھی بیٹھے تھے۔ صبح کا وقت تھا اور اندر کافی چہل پہل شروع ہو چکی تھی۔ بار بار دوکانوں کا عملہ آکر مسافروں کو کھانے بیچنے کی کوشش کر رہا تھا۔ میں نے چائے اور اور ناشتہ کا ...

Read More »

جام ساقی کی کہانی۔۔۔۔۔۔

اس کے گھر اس کی والدہ کی تعزیت کیلیے بےنظیر بھٹو آ رہی تھیں۔ پریشانی یہ تھی کہ کامریڈ جام ساقی کے گھر کوئی صوفہ نہ تھا۔ میں نے پوچھا، کرسی تو ہوگی؟ کہا، بس ایک پرانا پلنگ ہے۔ لمبی ٹوٹی پھوٹی گلی سے گزر کر بےنظیر بھٹو اپنے جیالوں کے لشکر کے ساتھ کامریڈ کی بیٹھک میں داخل ہوئیں۔ ...

Read More »

اک احساس کہ الفاظ بیاں‌نہیں‌ہیں عابدہ حسنات لندن

Feeling speechless but honoured عابدہ حسنات لندن شام یا صبح کے وقت، آدھے گھنٹہ کی واک میرا روز کا معمول ہے۔ پیدل اور سائیکل چلانے والوں کے لیے ،ایک راستہ بنا ہوا ہے جہاں بہت لوگ اپنے کتوں کو یا فیملی کے ساتھ واک کرنے کے کیے آتے ہیں۔ ان میں اکثر تعداد بزرگ حضرات کی ہوتی ہے جن سے ...

Read More »

جگت کیسے شروع ہوئی۔

شہزاد بسرہ ملک خداداد میں ہر کوئی جگت بازی کا ماہر ہے۔۔۔لیکن عرصہ دراز سے بعض محققین کی اسکے آغاز اور موجد کی تلاش اور تانے بانے ڈھونڈنے کیلیئے۔۔۔ دن رات کی سرتوڑ کوششوں اور تحقیق سے ممکن حد تک جگتیں مارنے کا رواج زمانہ قبل از مسیح سے ثابت ہوچکا ہے۔۔۔ پرپہلی بار جگت کس نے لگائی پر کچھ ...

Read More »

لِلّٰہ اقبا ل پر ظلم نہ کیجیے

انتخاب محسن حسین نقوی اقبال پہ ظلم نہ کیجے : انٹرنیٹ کی دُنیا میں اور بالخصوص فیس بُک پر اقبال کے نام سے بہت سے ایسے اشعار گردِش کرتے ہیں جن کا اقبال کے اندازِ فکر اور اندازِ سُخن سے دُور دُور کا تعلق نہیں۔ کلامِ اقبال اور پیامِ اقبال سے محبت کا تقاضا ہے، اور اقبال کا حق ہے ...

Read More »

ایک لا زوال دن یوم آزادی پاکستان

فوزیہ وحید اوسلو یوم آزادی پاکستان یا یوم استقلال ہر سال ۱۴اگست کو پاکستان میں آزادی کے دن کی نسبت سے منایا جاتا ہے یہ وہ دن ہے جب پاکستان ۱۹۴۷ میں انگلستان سے آزاد ہو کر معرض وجود میں آیا ۱۴ اگست کا دن پاکستان میں سرکاری سطح پر قومی دن تہوار کے طور پر بڑے دھوم دھام سے ...

Read More »

’’ عمل کی گھڑی ‘‘

کہنے کو جب بہت کچھ ہو ، اور سوچنے کو کچھ نہ ہو ، تو ہمارے پاس کھونے کے لئیے کچھ نہیں ہوتا  اور جب کھونے کے لئیے کچھ نہ ہو تو کچھ کھونے کا ڈر بھی نہیں ہوتا  اور جب کسی بات کا ڈر نہ ہو تو ہم سوچے سمجھے بنا بولے چلے جاتے ہیں ۔   بولنے والے ...

Read More »
Copy Protected by Chetan's WP-Copyprotect.