Breaking News
Home / ادب / رھے ھجر میں یا وصال میں

رھے ھجر میں یا وصال میں

رھے ھجر میں یا وصال میں
تُو رھےجیسےبھی حال میں
نہ آئے لغزش تیری چال میں
تُو رھے خدا کی ڈھال میں
جو ابھی ھو تیرے خیال میں
تجھےسب ملے نئےسال میں

تیرے اپنے سارے قریب ھوں
اورمحبتیں بھی نصیب ھوں
جو رقیب ھیں وہ حبیب ھوں
وہ امیر ھوں جو غریب ھوں
رھے تیرا ستارہ کمال میں
تجھےسب ملے نئےسال میں

تیری سب دعائیں قبول ھوں
تُو نہ ھو تو سارےملول ھوں
غم جوبھی آئیں فضول ھوں
نصیب خوشیوں کوطُول ھوں
تُو کبھی نہ آئے زوال میں
تجھےسب ملے نئےسال میں

بڑے تیرے لیے بے چین ھوں
تیرے بچے قرة العین ھوں
جوخدا اور تیرےمابین ھوں
وہی تیرا نصب العین ھوں
تُو کبھی نہ آئے سوال میں
تجھےسب ملے نئےسال میں

تجھے فکر بھی ھو نماز کا
انجام ھو تیرے ھر آغاز کا
تجھے چلے پتہ اس راز کا
قبول ھونا ھے اس آواز کا
جو ندا ھو سوزو ملال میں
تجھےسب ملے نئےسال میں

تیرا ھاتھ دعا کو اٹھا کرے
تو میرے لئے بھی دعا کرے
جو چاھے تجھ کو ملا کرے
جا خدا تیرا بھی بھلا کرے
ھو ھر چاہت تیری فال میں
تجھےسب ملے نئےسال میں

Check Also

کوئی ان سا ہو تو سامنے لاو۔۔۔۔

میں پوری رات ایک ناول(سچی داستان پر مشتمل) پڑھتا رہا۔۔۔۔اسی اثناء میں فجر ہو گئی۔۔۔لہذا ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

Copy Protected by Chetan's WP-Copyprotect.
%d bloggers like this: