Home / حالات حاضرہ / خبریں / وہ بوتل جس میں ہر بات پوری کرنے والا جن بند ہے مل گئی، قیمت 10لاکھ روپے

وہ بوتل جس میں ہر بات پوری کرنے والا جن بند ہے مل گئی، قیمت 10لاکھ روپے

وہ بوتل جس میں ہر بات پوری کرنے والا جن بند ہے مل گئی، قیمت 10لاکھ روپے

الہ دین کے چراغ کا ذکر آپ نے بچپن میں ضرور پڑھا ہو گا ۔ فلموں کہانیوں میں بھی اس چراغ یا بوتل کا بکثرت ذکرملتا ہے جس میں قید جن کو حاضر کر کے کوئی بھی کام لیا جا سکتا ہے۔ شاید آپ بھی سوچتے رہے ہوں گے کہ یہ چیز آخر ملے گی کہاں، تو آپ کی اطلاع کے لئے بتائے دیتے ہیں کہ بالآخر بھارت کے شہر بگواتی میں وہ بوتل مل گئی ہے جس کے اندر ایک جن قید ہے۔
ٹائمز آف انڈیا کے مطابق تپاس رائے چوہدری نامی بھارتی شہری کا کہنا ہے کہ چند دن قبل ایک دوست نے اسے فون کر کے بتایا کہ اسے جن والی بوتل کے بارے میں پتا چلا ہے۔ مزید معلومات لی گئیں تو پتا چلا کہ بوتل کے جن کو باہر نکال کر اس سے کوئی بھی کام لیا جا سکتا ہے اور اگر وہ اسے خریدنے میں سنجیدہ ہیں تو جا کر اسے دیکھ بھی سکتے ہیں۔
اچھی طرح معلومات لینے کے بعد تپاس رائے چوہدری کچھ قریبی دوستوں کو ہمراہ لے کر خریداری کے لئے جا پہنچا۔ یہ سافٹ ڈرنک کی پرانی بوتل تھی جس کے اندر ایک روپے کا سکہ پڑا تھا۔ چار افراد اس بوتل کی حفاظت پر معمور تھے اور ان کا کہنا تھا کہ یہ بوتل جن سمیت 10 لاکھ روپے میں مل سکتی ہے۔ یہ سن کر تپاس رائے کہنے لگا کہ اس کے پاس تو اتنی رقم نہیں ہے، جس پر بوتل کے محافظ بہت برہم ہوئے اور تپاس و ساتھیوں کو پکڑ کر زدوکوب کیا۔ انہوں نے تپاس کی جیب میں موجود رقم بھی چھین لی اور اسے ایک کمرے میں بند کر دیا۔ اتفاق سے اس کا موبائل فون اس کے پاس تھا جسے استعمال کرتے ہوئے وہ ایک دوست کو اپنا حال بتانے میںکامیاب ہو گیا۔ اس کے دوست نے پولیس کو اطلاع کی اور یوں بالآخر تپاس کو رہائی ملی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ بوتل کے جن کا شعبدہ تیار کرنے والے فراڈیوں کو بھی پکڑ لیا گیا ہے اور ان کے خلاف قانونی کاروائی کا سلسلہ جاری ہے۔

Check Also

حضرت محمد ﷺ اور حضرت عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا کے بارے میں غیرمسلم خاتون کا مسلمان عالم دین سے سوال، آگے سے ایسا جواب دیا کہ سن کر خاتون نے فوری اسلام قبول کر لیا

معروف امریکی مسلمان عالم دین عمر سلیمان سے ایک خاتون نے حضرت محمد ﷺ اور ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

%d bloggers like this: