Breaking News
Home / اسلام / بادشاہ وقت بھیس بدل کر مدرسہ پہنچ گیا اور طلبا سے ایک سوال کا جواب سننے کے بعد اس نے مدرسہ بند کرنے کا فیصلہ کرلیا لیکن ایک طالب علم کے جواب نے اسکو ارادہ بدلنے پر مجبور کردیا ،وہ طالب علم کون تھا کہ جس پر امت مسلمہ آج بھی فخر کرتی ہے

بادشاہ وقت بھیس بدل کر مدرسہ پہنچ گیا اور طلبا سے ایک سوال کا جواب سننے کے بعد اس نے مدرسہ بند کرنے کا فیصلہ کرلیا لیکن ایک طالب علم کے جواب نے اسکو ارادہ بدلنے پر مجبور کردیا ،وہ طالب علم کون تھا کہ جس پر امت مسلمہ آج بھی فخر کرتی ہے

55

امام غزالیؒ ان دنوں جس مدرسہ میں زیر تعلیم تھے بادشاہِ وقت بھیس بدل کر انکے مدرسہ نظامیہ میں پہنچ گیا ۔۔اس نے طلبہ سے دریافت کرنا شروع کردیا کہ علم سے تمہارا کیا مقصود ہے؟ سب نے مختلف جواب دیئے ۔کسی نے منصب قضاء اور کسی نے منصب افتاء کیلئے اپنا نقطہ نظر بیان کیا۔

جب بادشاہ نے امام غزالیؒ سے پو چھا توآپؒ نے سب سے پہلے بادشاہ کو اسکے سوال کا جواب دینے کی بجائے اللہ تعالیٰ کا وجوداور وحدانیت بدلیل عقل ونقل ثابت کیا۔انہوں نے یہبات اس لئے کی یہ شخص کہیں منکر نہ ہو۔پھر بادشاہ کے سوال کا جواب دیا’’ میں علم اس لئے پڑھ رہا ہوں کہ اللہ تعالیٰ کی مرضیات اور نا مرضیات معلوم کروں اور مرضی الٰہی کے مطابق عمل کروں‘‘
بادشاہ ان کے اس جواب سے بہت خوش ہوا اور اس نے اپنا آپ ظاہر کرتے ہوئے کہا’’ میں بادشاہ ہوں اور میں نے اور لوگوں کے جوابات سے یہ ارادہ کر لیا تھا کہ آج سے اس مدرسہ کو بند کردوں گا۔اس لئے کہ کوئی بھی اللہ کے لئے علم حاصل کر نے والا نہیں ہے۔روپیہ فضول ضائع ہو رہا ہے ،مگر آپ جیسے طالب علم جب اس مدرسہ میں موجود ہیں تو میری محنت اصول ہو گئی۔ اب آپ کی وجہ سے اس مدرسہ کو باقی رکھوں گا‘‘

Check Also

ینگ بلڈ گروپ کے چھ ممبر منشیات کی اسمگلنگ کے الزام میں گرفتار

اوسلو پولیس کے مطابق ایک برس پہلے شروع کیے جانے والے ڈرگ مافیا کی تفتیش ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

%d bloggers like this: