Breaking News
Home / حالات حاضرہ / خبریں / مصر میں ساڑھے تین ہزار سال پُرانی ’ممی ‘ دریافت

مصر میں ساڑھے تین ہزار سال پُرانی ’ممی ‘ دریافت

1

ماہرین آثار قدیمہ نے مصر میں کچھ نئی ممیاں دریافت کر لی ہیں لیکن یہ فراعین کی نہیں بلکہ ان کے شاہی سنار اور اس کی بیوی کی ہیں۔ الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق یہ ممیاں دریائے نیل کے مغربی کنارے پر واقع قدیم شہر لکسور کے کھنڈرات میں کے ایک مقبرے سے دریافت کی ہیں جو 3500سال پرانی ہیں۔ مصر کے وزیرنوادرات خالد العنانی کا کہنا تھا کہ ”یہ مقبرہ اچھی حالت میں نہیں ہے لیکن اس میں دفن ہونے والے شاہی سنار اور اس کی بیوی کے مجسمے بھی موجود ہیں۔

2

رپورٹ کے مطابق یہ مقبرہ رواں سال اپریل میں مصر کے ماہرین آثار قدیمہ نے دریافت کیا تھا جس کا اب باقاعدہ اعلان کیا گیا ہے۔ اس مقبرے میں سنار اور اس کی بیوی کے علاوہ بھی کئی لوگوں کی ممیاں اور 1ہزار سے زائد مجسمے دریافت ہوئے ہیں۔ ان کا تعلق بھی 21ویں اور 22ویں سلطنتوں سے ہے۔یہ اس دور کے مصری لوگ تھے۔ اس مقبرے کی دیواریں پر تحاریر بھی کندہ کی گئی ہیں جنہیں پڑھ کر ماہرین بھی دنگ رہ گئے۔ ماہرین کے مطابق اس تحریر میں آئندہ زندگی میں مرنے والوں کی ذمہ داریوں کا تعین کیا گیا ہے۔ماہرین کے مطابق قدیم مصر میں مرنے والوں کے ساتھ ان کے مجسمے دفن کرنے کا مقصد بھی آئندہ زندگی میں ان کے کام کا تعین کرنا ہی ہوتا تھا۔

3

Check Also

رمضان المبارک میں عمر کوٹ کی ہندو برادری نے مسلمانوں کیلئے ایسا کام کردیا کہ آپ بھی داد دینے پر مجبور ہوجائیں گے

  ماہ رمضان المبارک میں عمرکوٹ میں مذہبی رواں داری کی اعلیٰ مثال مقامی ہندوؤں ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

%d bloggers like this: