Breaking News
Home / حالات حاضرہ / خبریں / اوسلو کے علاقے فیورست میں غیر پاکستانی اردو بولنے والا نارویجن شخص

اوسلو کے علاقے فیورست میں غیر پاکستانی اردو بولنے والا نارویجن شخص

اوسلو سے باہر آلنا بی دیل فیورست ایک کثیر ثقافتی علاقہ ہے۔یہاں رہنے والوں کی اکثریت کا تعلق مختلف ایشیائی ممالک سے ہے۔یہی وجہ ہے کہ یہاں کے اسکولوں میں کئی زبانیں بولنے والے بچے اور اساتذہ نظر آئیں گے۔
ایک پچیس سالہ نارویجن نے بتایا کہ اس نے اردو زبان اپنے ایک پاکستانی دوست سے سیکھی۔اس نے کہا کہ جب کوئی اسمارٹ ٹیچر نظر آتا تو میرا دوست کہا کہ یہ فٹ ہے۔اسی طرح کام پر ایک آنٹی ہیں میں انہیں السلامو علئیک آنٹی کیا حال ہے کہتا ہوں تو وہ بہت خوش ہو جاتی ہیں اور میرے کندھے پرہاتھ پھیرتی ہیں۔مجھے سموسے پکوڑے بہت پسند ہیں جو کہ اکثر آنٹی مجھے کھلاتی ہیں۔
UFN/TV2

Check Also

شادی پر خوبصورت نظر آنے کے لئے دلہن نے اپنے چہرے پر 6 لاکھ روپے لگادئیے، کیا فرق پڑا؟ دیکھ کر آپ کی بھی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ جائیں گی

چھ لاکھ میں ہمارے ہاں لوگ اچھی بھلی شادی کر لیتے ہیں لیکن ان محترمہ ...

2 comments

  1. wah kia baat he is bande kee maze hein iske!

  2. Ji sahi kha ap nai
    urdu bolnai k badlai mai pakorai samosai millain to waqi maza to aey ga Ghzala ji

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

%d bloggers like this: