Home / حالات حاضرہ / خبریں / والدین کو بچوں کے اخراجات کی ادائیگی بند کرنے پر غور

والدین کو بچوں کے اخراجات کی ادائیگی بند کرنے پر غور

اکثر سیاسی پارٹیاں اس بات پر متفق ہیں کہ ایسے والدین جن کی آمدن ذیادہ ہے انہیں بچوں کے اخراجات حکومت کو نہیں ادا کرنے چاہیں۔آربائیدر پارٹی کے نو جوان سربراہ آٹلے سائمنسن Atle Simonsen کے مطابق ایسے والدین جن کی آمدن ایک ملین تک ہے انہیں حکومت کو بچوں کے اخراجات نہیں ادا کرنے چاہیئں۔دوسرے نو جوان سیاستدانوں کے گروپ نے بھی اس تجویز کی تائید کی اور کہا کہ جن والدین کی آمدن کم ہے انہیں بچوں کے اخراجات کی مد میں ذیادہ رقم ملنی چاہیے۔
ایک سروے رپورٹ کے مطابق آدھے کے قریب نارویجن بچوں کے اخراجات کی مد میں ملنے والی رقم پس انداز کر لیتے ہیں۔والدین نے کہا کہ وہ یہ رقم بچے کے مکان ڈرائیونگ لائسنس یا تعلیمی اخراجات کے لیے جمع کرتے ہیں۔
جبکہ دولتمند والدین کے بچوں کے لیے یہ رقم کسی کام کی نہیں۔آج ناروے کے ہر بچے کو ماہانہ نو سو ستر کرائون کی رقم حکومت والدین کو ادا کرتی ہے۔
NTB/UFN

Check Also

ناروے میں ایک غیبی مسجد کے لیے فنڈ

ناروے کے شہر Flekkebyen i Rjukan فلیکے بیّن میں ایک النور نامی مسجد میں فنڈز ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

Copy Protected by Chetan's WP-Copyprotect.
%d bloggers like this: