Home / حالات حاضرہ / خبریں / ناروے میں امریکی جاسوسی

ناروے میں امریکی جاسوسی

لیفٹیننٹ نیل گرانڈ ہاگن سربراہ ڈیفنس انٹیلیجنس سروس نے پریس کانفرنس میں امریکی جاسوسی کے الزام کو مسترد کیا۔انکا کہنا ہے کہ مقامی نارویجن اخبار کی یہ رپورٹ غلط فہمی پر مبنی ہے۔اس اخبار نے جو اعداد و شمار لکھے ہیں
swedish وہ درحقیقت ناروے میں امریکی جاسوسی کے متعلق نہیں تھے بلکہ نارویجن انٹیلیجنس سروس کے تھے۔یہ وہ اعدادو شمار ہیں جو کہ نارویجن انٹیلیجنس سروس کی جانب سے افغانستان اور دیگر جنگی علاقوں کی موبائیل سروس کی نگرانی کے سلسلے میں جاری کیے گئے تھے۔اس قسم کی نگرانی ان علاقوں میں نارویجن فوجیوں کی حفاظت کے نقطہء نظر سے ضروری ہے۔اور یہ معلومات نارویجن حکومت دوسرے ممالک کے ساتھ بھی شیئر کرتی ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ وہ ناروے میں کسی بھی قسم کے غیر قانونی جاسوسی کے نظام سے قطعی لاعلم ہیں۔

Check Also

اوسلو میں قرنطینہ ایکٹ کی خلاف ورزی کرنے والے کو چھ ماہ قید کی سزا

سوموار کی رات ایک بائیس سالہ شخص کو اوسلو پولیس نے صبح کے ساڑھے تین ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Enable Google Transliteration.(To type in English, press Ctrl+g)

Copy Protected by Chetan's WP-Copyprotect.
%d bloggers like this: